پریس ریلیز|

اسلام آباد: مورخہ 28 جنوری 2021
 
ایشیائی امور کے لئے کویت کے اسسٹنٹ وزیر خارجہ سفیر علی سلیمان السعید کا انتیس جنوری دوہزار اکیس کو چار روزہ دورہ پاکستان مکمل ہوگیا۔ یہ دورہ نومبر 2020 میں نائیجر، نیامے میں ’او۔آئی۔سی‘ وزرا خارجہ کے سینتالیسویں اجلاس کے موقع پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے ان کے کویتی ہم منصب کی ملاقات کے تناظر میں ہوا۔
 
اسسٹنٹ وزیر خارجہ نے دوطرفہ سیاسی مشاورت کے تیسرے اجلاس میں شرکت کی جس کی مشترکہ صدارت وزارت امور خارجہ کے سپیشل سیکریٹری (مشرق وسطی) سفیر خالد ایچ میمن نے کی تھی۔ سیاسی مشاورت میں دوطرفہ تعلقات کے تمام پہلوں، باہمی دلچسپی کے عالمی اور علاقائی امور پر اشتراک عمل کے علاوہ تحفظ خوراک، زراعت، مرغ بانی، حیوانات، سیاحت اور تیل کی تلاش کے شعبہ جات میں تعاون بڑھانے کا جائزہ لیاگیا۔ پاکستان میں سی پیک سے متعلق منصوبہ جات میں ممکنہ کویتی سرمایہ کاری پر بھی گفتگو کی گئی۔
 
وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کے علاوہ کویتی اسسٹنٹ وزیر خارجہ نے وزیرداخلہ،سمندر پارپاکستانیوں اور افرادی قوت کی ترقی کے لئے وزیراعظم کے معاون خصوصی، سرمایہ کاری بورڈ کے چئیرمین اور معاشی امور کی وزارت کے سیکریٹری سے ملاقاتیں کیں۔ سیکریٹری خارجہ سہیل محمود نے کویتی وفد کے اعزاز میں ظہرانہ بھی دیا۔
 
پاکستان اور کویت کے درمیان دیرینہ برادرانہ تعلقات استوار ہیں جو قیادت کی سطح پر گرمجوشی، دونوں ممالک کے عوام میںمشترک عقیدے، ثقافت اور روایات پر مبنی دائمی تعلقات سے عبارت ہیں۔ اکتوبر 2020 میں امیر کویت کی وفات پر تعزیت کے لئے صدر پاکستان نے کویت کا دورہ کیا تھا۔ قبل ازیں وزیر خارجہ نے مئی 2019 میں کویت کا دورہ کیاتھا۔ کورونا عالمی وبا کے بعد صحت کے شعبے اور تحفظ خوراک کے معاملے میں دونوں ممالک میں بھرپوراشتراک کے نتیجے میں کویت کے ساتھ پاکستان کے برادرانہ تعاون کو مزید تقویت حاصل ہوئی تھی۔
 
کویت خلیج تعاون کونسل (جی۔سی۔سی) کا ایک اہم ملک ہے۔ کویت کی قیادت نے سفارتی ذرائع سے ’جی۔سی۔سی‘ کے برادر ممالک کے درمیان اختلافات کے حل میں سہولت کاری کے لئے کلیدی کردار ادا کیا۔ کویت کے اس کردار کو پاکستان اور عالمی برادری نے بے پناہ سراہا۔
43/2021
Close Search Window